> <

1950-09-09
4893 Views
گوگی علائو الدین ٭ پاکستان کے اسکواش کے معروف کھلاڑی گوگی علائو الدین 9 ستمبر 1950ء میں لاہور میں پیدا ہوئے۔ 1967ء میں انہوں نے قومی جونیئر شپ اور 1970ء اور 1971ء میں برٹش امیچر اسکواش چیمپئن شپ جیتنے کا اعزاز حاصل کیا۔1972ء اور 1973ء میں انہوں نے پاکستان اوپن اسکواش چیمپئن شپ جیتی۔ 1973ء اور 1975ء میں وہ برٹش اوپن اسکواش چیمپئن شپ کے فائنل تک پہنچنے میں کامیاب ہوئے تھے مگر بالترتیب جونابیرنگٹن اور قمر زمان کے ہاتھوں شکست کھا گئے تھے۔ ٭30 مئی 2008ء کو گوگی علائو الدین وفات پاگئے۔
1951-04-09
2754 Views
ہاشم خان ٭9 اپریل 1951ء کو لندن میں پاکستان کے کھلاڑی ہاشم خان نے مصر کے کھلاڑی محمود الکریم کو 5-9 ‘9۔صفر اور 9۔صفر سے ہرا کر پہلی مرتبہ برٹش اوپن اسکواش چیمپین شپ جیتنے کا اعزاز حاصل کیا۔ ہاشم خان نے سات برس پہلے بمبئی میں آل انڈیا اسکواش چیمپین شپ اور دوبرس پہلے 1949ء میں پاکستان چیمپین شپ جیتی تھی۔ ہاشم خان 1958ء تک اسکواش کے افق پر چھائے رہے۔ اس دوران انہوں نے صرف ایک مرتبہ (روشن خان سے) شکست کھائی اور سات مرتبہ برٹش اوپن اسکواش چیمپین شپ جیتنے کا اعزاز حاصل کیا۔  
1963-12-10
3065 Views
جہانگیر خان ٭10 دسمبر 1963ء دنیائے اسکواش کے سب سے عظیم کھلاڑی جہانگیر خان کی تاریخ پیدائش ہے۔ جہانگیر خان کراچی میں پیدا ہوئے۔ ان کے والد روشن خان خود بھی اسکواش کے معروف کھلاڑی تھے اور 1957ء میں برٹش اوپن اسکواش ٹورنامنٹ جیت چکے تھے۔ روشن خان اپنے بڑے بیٹے طورسم خان کواسکواش کا عالمی چیمپئن بنانا چاہتے تھے اور ان کی تمام توجہ بھی انہیں پر مرکوز تھی کہ 26 نومبر 1979ء کو طورسم خان وفات پاگئے۔ طورسم خان کی وفات کے بعد روشن خان نے جہانگیر خان کو اسکواش کے مقابلوں کے لیے تیار کیاجنہوں نے اپریل 1981ء میں پہلی مرتبہ برٹش اوپن اسکواش ٹورنامنٹ کا فائنل کھیلنے کا اعزاز حاصل کیا۔ جہانگیر خان پہلے برس تو برٹش اوپن نہیں جیت سکے مگر اسی برس انہوںنے اپنے ہم وطن قمر زمان کو ورلڈ اوپن اسکواش ٹورنامنٹ کے فائنل میں شکست دے کر کامیابیوں اور کامرانیوں کے اس سفر کا آغاز کیا جس کی کوئی مثال اسکواش کی دنیا میں توکجا کھیلوں کی دنیا میں بھی دور دور تک نہیں ملتی۔ جہانگیر خان 1993ء تک اسکواش کی دنیا پر راج کرتے رہے اس دوران انہوں نے دنیائے اسکواش کی ہر بڑی چیمپئن شپ جیتی اور 1981ء سے 1986ء تک ہر مقابلے میں ناقابل شکست رہے۔ اپنے کیریئر میں انہوں نے دس مرتبہ برٹش اوپن اور چھ مرتبہ ورلڈ اوپن اسکواش ٹورنامنٹ جیتنے کا اعزاز حاصل کیا۔ ان کا 6 مرتبہ ورلڈ اوپن اسکواش ٹورنامنٹ جیتنے کا ریکارڈ تو جان شیر خان توڑ چکے ہیں مگر ان کا 10 مرتبہ برٹش اوپن جیتنے کا ریکارڈ آج بھی برقرار ہے۔  
1969-06-15
3632 Views
جان شیر خان ٭15جون 1969ء اسکواش کے عظیم کھلاڑی جان شیر خان کی تاریخ پیدائش ہے۔ جان شیر خان پشاور میں پیدا ہوئے تھے۔ ان کے والد بہادر خان پاکستان ایئر فورس سے وابستہ تھے اور ان کے دو بھائی محب اللہ خان جونیئر اور اطلس خان اسکواش کے کھیل سے وابستہ تھے۔ 1986ء میں جان شیر خان نے پہلی مرتبہ ورلڈ جونیئر اسکواش چیمپئن شپ جیتنے کا اعزاز حاصل کیا۔ 1987ء میں انہوں نے پہلی مرتبہ ورلڈ اوپن اسکواش ٹورنامنٹ اور 1992ء میں پہلی مرتبہ برٹش اوپن اسکواش ٹورنامنٹ جیتنے میں کامیابی حاصل کی۔ انہوں نے مجموعی طور پر آٹھ مرتبہ ورلڈ اوپن اسکواش ٹورنامنٹ اور چھ مرتبہ برٹش اوپن اسکواش ٹورنامنٹ جیتا۔ وہ 99 پروفیشنل ٹائٹلز جیتنے کا اعزاز رکھتے ہیں۔
1975-02-08
2371 Views
قمر زمان ٭8 فروری 1975ء کو پاکستان کے نامور کھلاڑی قمر زمان اپنے ہم وطن گوگی علائو الدین کو 9-6, 9-7 اور 9-1 سے شکست دے کر اسکواش کی دنیا کا سب سے بڑا اعزاز برٹش اسکواش چیمپین شپ جیتنے میں کامیاب ہوگئے۔ قمر زمان سے پہلے پاکستان کے ہاشم خان‘ روشن خان‘ اعظم خان اور محب اللہ سینئر تیرہ مرتبہ یہ اعزاز حاصل کرچکے تھے مگر گذشتہ گیارہ برس سے آفتاب جاوید‘ گوگی علائو الدین اور محمد یٰسین کے فائنل میں پہنچنے کے باوجود کوئی پاکستانی کھلاڑی یہ اعزاز حاصل نہیں کرسکا تھا۔ قمر زمان بھی برٹش اوپن اسکواش چیمپین شپ کا اعزاز محض ایک برس تک اپنے پاس رکھ پائے اور اس کے بعد چار مرتبہ فائنل میں پہنچنے کے باوجود یہ اعزاز کبھی دوبارہ حاصل نہ کرسکے۔ ان چار مقابلوں میں تین مرتبہ انہیں جیوف ہنٹ کے ہاتھوں اور ایک مرتبہ جہانگیر خان کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔  
1979-11-28
3554 Views
طورسم خان ٭28 نومبر 1979ء کو اسکواش کے مشہور پاکستانی کھلاڑی طورسم خان آسٹریلیا کے شہر ایڈیلیڈ میں آسٹریلین اوپن اسکواش ٹورنامنٹ کا ایک میچ کھیلتے ہوئے دل کا شدید دورہ پڑنے کی وجہ سے انتقال کرگئے۔ یہ اسکواش کی تاریخ کا پہلا واقعہ تھا جب کوئی کھلاڑی کھیل کے دوران اسکواش کورٹ میں فوت ہوا تھا۔ طورسم خان، پاکستان کے سابق برٹش اوپن چیمپئن روشن خان کے صاحبزادے تھے۔ وہ 27 ستمبر 1951ء کو پیدا ہوئے تھے۔ 1967ء میں وہ قومی چیمپئن بنے، 1971ء میں انہوں نے عالمی ایمیچر اسکواش چیمپئن شپ میں پاکستان کی نمائندگی کی۔ 1972ء میں انہوں نے انگلستان اوپن جیتی، 1974ء میں شمالی انگلستان اوپن، امریکن اوپن اور ویلش اوپن اسکواش چیمپئن شپ جیتی اور 1978ء میں برٹش اوپن کے کوارٹر فائنل میں قمر زمان کا مقابلہ کیا۔ ان کی شدید خواہش تھی کہ ان کا چھوٹا بھائی جہانگیر خان اسکواش کا عالمی چیمپئن بنے مگر ابھی اس نے عالمی ایمیچر اسکواش چیمپئن شپ جیتی ہی تھی کہ ڈیڑھ ماہ کے اندراندر طورسم خان اپنے خالق حقیقی سے جاملے۔ طورسم خان کراچی میں گورا قبرستان سے متصل فوجی قبرستان میں آسودۂ خاک ہیں۔      
1981-11-29
3461 Views
جہانگیر خان ٭ پاکستان کے عظیم کھلاڑی جہانگیر خان نے 29نومبر 1981ء کو اسکواش کا ورلڈ اوپن ٹورنامنٹ جیت کر کامیابیوں اور کامرانیوں کے اس سفر کا آغاز کیا جس کی کوئی نظیر یا مثال سکواش کی دنیا میں تو کجا کھیلوں کی دنیا میں بھی دور دور تک نہیں ملتی۔ جہانگیر خان نے اپریل 1981ء میں برٹش اوپن کے فائنل میں جیف ہنٹ سے شکست کھائی لیکن اسی برس ورلڈ اوپن اسکواش چیمپیئن شپ کے فائنل میں جب ان کا مقابلہ اپنے ہم وطن قمر زمان سے ہوا تو انہوں نے وہ چیمپیئن شپ جیت کر دنیا کے سب سے کم عمر عالمی اسکواش چیمپیئن ہونے کا اعزاز حاصل کر لیا۔ جہانگیر خان نے اسکواش کی ورلڈ اوپن چیمپیئن شپ چھ مرتبہ جیتی تاہم اب ان کا یہ ریکارڈ جان شیر خان توڑ چکے ہیں۔      
1982-04-08
2786 Views
جہانگیر خان ٭ 8 اپریل 1982ء کو پاکستان کے عظیم کھلاڑی جہانگیر خان نے پاکستان کے ہدایت جہاں کو برٹش اوپن اسکواش ٹورنامنٹ کے فائنل میں شکست دے کریہ اعزاز پہلی مرتبہ حاصل کیا۔ گزشتہ برس انہوں نے اس ٹورنامنٹ کے فائنل میں جیف ہنٹ کے ہاتھوں شکست کھائی تھی تاہم نومبر 1981ء میں وہ ورلڈ اوپن اسکواش چیمپئن شپ جیتنے میں کامیاب ہوگئے تھے۔جہانگیر خان نے برٹش اوپن اسکواش چیمپئن شپ مسلسل دس مرتبہ جیتی۔ ان کا یہ ریکارڈ نہ صرف ابھی تک ناقابل تسخیر ہے بلکہ اس کے ٹوٹنے کا دور دور تک کوئی امکان بھی نظر نہیں آتا۔  
1987-10-21
3484 Views
جان شیر خان ٭21اکتوبر 1987ء کو برمنگھم میں پاکستان کے کھلاڑی جان شیر خان نے آسٹریلیا کے کرس ڈٹمار کو شکست دے کر پہلی مرتبہ اسکواش کی عالمی چیمپیئن شپ جیتنے کا اعزاز حاصل کیا۔ ان سے پہلے پاکستان کے جہانگیر خان یہ اعزاز پانچ مرتبہ جیت چکے تھے۔ جان شیر خان نے اپنی فتوحات کا یہ سلسلہ اس کے بعد بھی جاری رکھا اور اسکواش کی یہ عالمی چیمپیئن شپ آٹھ مرتبہ اور برٹش اوپن اسکواش چیمپیئن شپ چھ مرتبہ جیتنے کا اعزاز حاصل کیا۔        
1991-04-22
2521 Views
جہانگیر خان ٭22 اپریل 1991ء وہ تاریخی دن تھا جب اسکواش کے عظیم کھلاڑی جہانگیر خان نے دسویں مرتبہ برٹش اوپن اسکواش چیمپئن شپ دسویں مرتبہ جیتنے کا اعزاز حاصل کیا۔ انہوں نے یہ اعزاز اپنے ہم وطن کھلاڑی جان شیر خان کو فائنل میں 2-9، 9-4، 9-4 اور 9-0 سے شکست دے کر حاصل کیا۔ جہانگیر خان گزشتہ برس نو مرتبہ برٹش اوپن چیمپئن شپ جیت کر عالمی ریکارڈ قائم کرچکے تھے۔ اس سال انہوں نے یہ اعزاز دسویں مرتبہ حاصل کرکے اپنے ریکارڈ کو مزید بہتر بنایا۔ ان کے ریکارڈ کی ایک اور خوبی یہ بھی تھی کہ انہوں نے یہ اعزاز دس برس تک مسلسل اپنے پاس رکھا تھا۔ ان دس برسوں میں وہ ورلڈ اوپن اسکواش چیمپئن شپ کے اعزاز سے تو محروم ہوئے مگر برٹش اوپن میں انہیں کوئی شکست نہیں دے سکا۔  
UP