> <

ڈاکٹر اعظم کریوی کا قتل

ڈاکٹر اعظم کریوی ٭22 جون 1955ء کو کراچی میں اردو کے ممتاز افسانہ نگار ڈاکٹر اعظم کریوی کو سفاکانہ طریقے سے قتل کردیا گیا۔ ان کی لاش اور ان کی سائیکل ڈرگ روڈ (موجودہ شارع فیصل) پر پرتگال کے سفارت خانے کے نزدیک پڑی پائی گئی۔ ڈاکٹر اعظم کریوی، ڈرگ کالونی (موجودہ شاہ فیصل کالونی) میں رہائش پذیر تھے اور سائیکل پر اپنے گھر جارہے تھے۔ پولیس کے مطابق غالباً کسی نے ان سے رقم چھیننے کے لئے ان پر حملہ کیااور ان کی مزاحمت پر انہیں قتل کرکے رقم لوٹ لی۔ ڈاکٹر اعظم کریوی پریم چند کے دبستان فن کے افسانہ نگار تھے۔ان کے افسانوی مجموعوں میں شیخ و برہمن، انقلاب، پریم کی چوڑیاں، دکھ سکھ، کنول اور دکھیا کی آپ بیتی کے نام سرفہرست ہیں۔

UP