> <

صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی۔ سہیل عباس

سہیل عباس ہاکی کے مایہ ناز کھلاڑی سہیل عباس 9 جون 1977ء کو کراچی میں پیدا ہوئے اور انہوں نے اپنے بین الاقوامی کیریئر کا آغاز 28 فروری 1998ء کو کیا۔ انھوں نے 8 اکتوبر 2004ء کو پاکستان اور بھارت کے درمیان کھیلے جانے والی 8 میچوں کی سیریز کے 7 ویں میچ میں جوامرتسر میں میں کھیلا گیا تھا، اپنے بین الاقوامی ہاکی کیریئر کا 268 واں گول اسکور کرکے ہالینڈ کے معروف کھلاڑی پال لٹجن کا 267 گول کا عالمی ریکارڈ توڑ دیا۔ پال لٹجن نے اپنے 267 گول 177 میچوں میں گول کئے تھے جبکہ سہیل عباس نے اپنا 268 واں گول 217 ویں میچ میں اسکور کیا تھا۔ 6 دسمبر 2009ء کو سہیل عباس نے ارجنیٹنا میں منعقد ہونے والے چیمپئنز چیلنج ہاکی کپ ٹورنامنٹ کے افتتاحی میچ میں ، جو ان کا 318واں بین الاقوامی میچ تھا،کینیڈا کے خلاف اپنے کیریئر کا 300 واں گول اسکور کیا اور یوں وہ دنیا کے پہلے کھلاڑی بن گئے جنہوں نے بین الاقوامی ہاکی میں 300 گول اسکور کرنے کا سنگ میل عبور کیا۔ سہیل عباس کے ان 300 گولوں میں ایک ڈبل ہیٹ ٹرک اور 21 ہیٹ ٹرکس شامل تھیں۔ سہیل عباس نے 2012 ء  کے لندن اولمپکس تک ہاکی کے میدان میں پاکستان کی نمائندگی کی۔ انھوں نے اپنے کیرئیر میں مجموعی طور پر 348 گول اسکور کیے تھے۔ دسمبر 2010ء تک سہیل عباس اپنے اس ریکارڈ کو 313 گول اسکور کرکے مزید بہتر بناچکے ہیں۔ 14 اگست 2004ء کو حکومت پاکستان انھیں صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی عطا کیا تھا۔

UP