> <

صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی۔ فرخندہ لودھی

فرخندہ لودھی اردو اور پنجابی کی ممتاز ادیبہ اور شاعرہ، فرخندہ لودھی 21 مارچ 1937ء کوہوشیار پور میں پیدا ہوئیں۔ گورنمنٹ کالج برائے خواتین ساہیوال سے گریجویشن کیا اور پنجاب یونیورسٹی سے لائبریری سائنس میں ایم ایس کا امتحان پاس کیا۔ 1969ء میں پہلا ناول حسرتِ عرض تمنا اشاعت پذیر ہوا جس نے ادبی حلقوں میں دھوم مچادی۔ فرخندہ لودھی ایک اچھی افسانہ نگار تھیں۔ افسانوی مجموعے شہر کے لوگ، آرسی، مینڈک دادا، بہن بھائی، چنے دے اوہلے، خوابوں کے کھیت، پیار کا پنچھی اور ہردے وچ تریڑاں کے نام سرفہرست ہیں۔ حکومت پاکستان نے انہیں 14 اگست 2003ء کو صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی عطا کیا تھا جبکہ پاکستان رائٹرز گلڈ نے 1982ء میں پنجابی افسانوی مجموعے ’’چنے دے اوہلے‘‘ پر ایوارڈ سے نوازا۔ فرخندہ لودھی نے 5 مئی 2010ء کو لاہور میں وفات پائی اور وہیں آسودہ خاک ہوئیں۔   

UP