> <

صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی۔ استاد حامد علی خان

استاد حامد علی خان پٹیالہ گھرانے سے تعلق رکھنے والے پاکستان کے نام ور کلاسیکی گلوکار استاد اختر علی خان کے فرزند اور استاد امانت علی خان اور استاد فتح علی خان کے چھوٹے بھائی استاد حامد علی خان 1953 میں پیدا ہوئے۔ انھوں نے نہ صرف کلاسیکی موسیقی میں نام کمایا بلکہ اس کے ساتھ ساتھ غزل اور ٹھمری میں بھی اپنی فنکارانہ صلاحیتوں سے شائقین کے دل جیت لیے۔ وہ خیال گائیکی کے بڑے سریلے فن کاروں میں شمار ہوتے ہیں اور کلاسیکی موسیقی کے علاوہ غزل،ٹھمری اور گیت گانے میں بھی اختصاص رکھتے ہیں۔ ابتدا میں وہ اپنے بھتیجے اسد امانت علی خان کے ساتھ جوڑی بناکر گاتے تھے تاہم اب وہ تنہاپرفارم کرتے ہیں۔ حامد علی خان کے تین بیٹوں نایاب علی ، ولی حامد علی اور انعام علی نے راگا بوائز کے نام سے ایک بینڈ بھی بنایا ہے جو خالص کلاسیکی موسیقی اور پاپ میوزک دونوں میں اپنے کمالات دکھا رہا ہے۔ حکومت پاکستان نے موسیقی کے شعبے میں استاد حامد علی خان کی خدمات کے اعتراف کے طور پر انہیں 14 اگست 1996ء کو صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی  اور بعد ازاں ستارہ امتیازعطا کیا تھا۔  

UP