> <

صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی۔ ڈاکٹر مہر عبدالحق

ڈاکٹر مہر عبدالحق سرائیکی اور اردو کے ممتاز محقق، ماہر لسانیات، نقاد اور مترجم ڈاکٹر مہر عبدالحق یکم جون 1915ء کو لیہ میں پیدا ہوئے تھے۔ ان کی تصانیف میں سرائیکی لوک گیت، ملتانی زبان اور اس کا اردو سے تعلق، کونین دا والی، سرائیکی زبان دے قاعدے قانون، لغات فریدی، سرائیکی دیاں مزید لسانی تحقیقاں اور فرد فرید اور تراجم میں جاوید نامہ اقبال، رباعیات عمر خیام، کلام خواجہ فرید، قصیدہ بردہ شریف اور سب سے بڑھ کر قرآن پاک کا سرائیکی ترجمہ شامل ہے۔ اس ترجمے پر 1981ء میں انہیں حکومت پاکستان نے خصوصی اعزاز سے نوازا تھا۔ حکومت پاکستان نے 14 اگست 1994ء کو ڈاکٹر مہر عبدالحق کو ان کی ادبی خدمات کے اعتراف کے طور پرصدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی بھی عطا کیا تھا۔1969ء میں انہیں دائود ادبی انعام اور 1987ء میں اکادمی ادبیات کا خواجہ فرید ایوارڈ سے بھی نوازا گیا تھا۔ ڈاکٹر مہر عبدالحق 23 فروری 1995ء  کووفات پاگئے۔ وہ ملتان میں آسودہ خاک ہیں۔

UP