> <

صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی۔ عکسی مفتی

 عکسی مفتی ممتاز ماہر لوک ثقافت اور اردو کے ادیب عکسی مفتی، مشہور مصنف ممتاز مفتی صاحب کے صاحبزادے ہیں۔ تاہم یہ ان کی پہچان کا واحد حوالہ نہیں، ایک مشہور و معروف والد کی اولاد ہونے کے باوجود عکسی صاحب نے اپنی پہچان خود بنائی ہے اور اس کی انفرادیت برقرار رکھی ہے تاہم والد سے لکھنے کے جراثیم آپ کو ضرور منتقل ہوئے ہیں۔ ان کی ایک اہم پہچان لوک ورثہ سے ان کی وابستگی ہے۔ وہ لوک ورثہ کے ڈائریکٹر رہ چکے ہیں۔ اسلامی اور پاکستانی ثقافت کو دنیا بھر میں متعارف کروانے کے لئے ان کا کردار قابل تعریف ہے۔ اپنے والد کی طرح عکسی مفتی بھی اپنی زمین سے جڑے ہوئے ہیں۔ عکسی مفتی کی تصانیف میں لکڑی کا گھوڑا، ایک دن کی بات، مہا اوکھا مفتی ، تلاش اور پاکستانی ثقافت کے نام شامل ہیں۔ حکومت پاکستان نے ان کی خدمات کے اعتراف کے طور پر انھیں 14 اگست 1993 کو صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی عطا کیا تھا۔

UP