> <

صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی۔ ڈاکٹر حسن رضوی

ڈاکٹر حسن رضوی اردو کے ممتاز شاعر، ادیب اور صحافی ڈاکٹر سید حسن رضوی 18 اگست 1946ء کو انبالہ میں پیدا ہوئے تھے۔ وہ ایف سی کالج لاہور میں شعبہ اردو کے صدر تھے اور روزنامہ جنگ لاہور کے ادبی صفحے کے نگراں تھے۔ ان کے شعری مجموعوں میں ہجر دی پہلی شام، کوئی آنے والا ہے، اس کی آنکھیں شام، کبھی کتابوں میں پھول رکھنا، خواب سہانے یاد آتے ہیں، جمال احمد مرسل اور مدینے کی ہوا شامل ہیں۔ ان کے سفرنامے دیکھا ہندوستان، چینیوں کے چین میں اور ہرے سمندروں کے سفر کے نام سے اشاعت پذیر ہوئے۔ انہوں نے نامور شاعر ناصر کاظمی کے فن اور شخصیت پر ڈاکٹریٹ کیا تھا۔ ان کا یہ مقالہ کتابی شکل میں بھی شائع ہوچکا ہے۔حکومت پاکستان نے ڈاکٹر حسن رضوی کی خدمات کے اعتراف کے طور پر انھیں 14 اگست 1993ء کو صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی کا اعزاز عطا کیا تھا۔ ڈاکٹر حسن رضوی کا انتقال 15 فروری 2002ء کو لاہور میں ہوا۔ وہ فردوسیہ قبرستان فیروز پور روڈ میں آسودہ خاک ہیں ۔  

UP