> <

صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی۔ خیام سرحدی

خیام سرحدی فلم، ٹیلی وژن، ریڈیو اور اسٹیج کے نامور فن کارخیام سرحدی 1949ء میں پیدا ہوئے تھے۔ وہ پاکستانی فلمی صنعت کے مشہور ہدایت کار ضیا سرحدی کے صاحبزادے، موسیقار رفیق غزنوی کے پوتے اور گلوکارہ و اداکارہ سلمیٰ آغا کے کزن تھے۔ خیام سرحدی نے امریکا سے سینماٹو گرافی کا کورس کیا۔ 1960ء کی دہائی کے اواخر میں انہوں نے یورپ میں تھیٹر سے اپنے فن کی ابتدا کی اور انگلستان، یوگوسلاویہ، جرمنی اور یونان میں تھیٹر میں کام کرتے رہے۔ خیام سرحدی نے پاکستان ٹیلی وژن کے ڈرامے ’’ایک تھی مینا‘‘ سے اپنے کیریئر کا آغاز کیا۔ انہوں نے لاتعداد ٹی وی سیریلز اور سیریز میں کام کیا جن میں وارث، دہلیز، لازوال، سورج کے ساتھ ساتھ، ریزہ ریزہ، غریب شہر، اندھیرا اجالا، انگار وادی، من چلے کا سودا اور میری ذات ذرہ بے نشاں کے نام سرفہرست ہیں۔ انہوں نے قائداعظم پر بننے والی ڈاکومنٹری فلم ’’جناح‘‘ میں بھی سردار عبدالرب نشتر کا یادگار کردار ادا کیا تھا۔ خیام سرحدی نے اداکارہ عطیہ شرف اور اداکارہ صاعقہ سے شادیاں کی تھیں۔ حکومت پاکستان نے14 اگست 1991ء کو ان کے فنی صلاحیتوں کے اعتراف میں انہیں صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی عطا کیا تھا۔ خیام سرحدی 3 فروری 2011ء کو لاہور میں وفات پاگئے۔وہ لاہور میں ڈیفنس کے قبرستان میں آسودہ خاک ہیں۔

UP