موسیقار نذیر علی کی وفات

 نذیر علی ٭5 جنوری 2003ء کو پاکستان کے مشہور فلمی موسیقار نذیر علی لاہور میں وفات پاگئے۔ نذیر علی 1945ء میں گکھڑ منڈی ضلع گوجرانوالہ میں پیدا ہوئے تھے۔نذیر علی اپنے ہم عصر موسیقار ایم اشرف کے شاگرد تھے اور ان کے ساتھ تیس مارخان اور آئینہ فلم میں معاونت کرچکے تھے۔ نذیر علی نے پہلی مرتبہ پیداگیر میں موسیقی دی تاہم ان کی شہرت کا ستارا فلم دلاں دے سودے سے چمکا۔ نذیر علی کی دیگر فلموں میں جنٹرمین، اکبریٰ، دلا دے سودے، سجناں دور دیا، مستانہ ماہی، سلطان، عشق میرا ناں، دلدار صدقے، وچھڑیا ساتھی، بائیکاٹ، ہتھیار، سیونی میرا ماہی، بڈھا شیر، لال طوفان اور گجر 302 کے نام سرفہرست ہیں۔ انہوں نے 36 سال میں 140 فلموں میں اپنے فن کا جادو جگایا۔ انہوں نے 14 فلموں میں دھمالیں ریکارڈ کروائیں۔اسی باعث انہیں دھمال کا بادشاہ کہا جاتا تھا۔نذیر علی لاہور میں فیصل ٹائون کے قبرستان میں آسودۂ خاک ہیں۔  

UP