صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی۔ حنیف محمد

حنیف محمد پاکستان کے نامور ٹیسٹ کرکٹر حنیف محمد 21 دسمبر 1934ء کوجونا گڑھ میں پیدا ہوئے تھے۔ وہ پاکستان کی اس پہلی کرکٹ ٹیم کے رکن تھے جس نے اکتوبر 1952ء میں بھارت کے خلاف ٹیسٹ سیریز کھیلی تھی۔ حنیف محمد 1969ء تک ٹیسٹ کرکٹ کے میدان میں فعال رہے اس دوران انہوں نے 55 ٹیسٹ میچوں میں پاکستان کی نمائندگی کی اور 12 سنچریوں کی مدد سے مجموعی طور پر 3915 رنز اسکور کیے۔ ان کی ان 12 سنچریوں میں ایک ٹرپل سنچری (337 رنز) بھی شامل تھی جو آج بھی کسی پاکستانی کرکٹر کا ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے بڑا اسکور ہے۔ حنیف محمد کے تین بھائیوں وزیر محمد، مشتاق محمد اور صادق محمد نے بھی ٹیسٹ کرکٹ میں پاکستان کی نمائندگی کی۔ ان کے ایک اور بھائی رئیس محمد نے فرسٹ کلاس کرکٹ میں حصہ لیا اور ایک ٹیسٹ میچ میں بارہویں کھلاڑی کے طور پر شرکت کی۔ حنیف محمد کے صاحبزادے شعیب محمد نے بھی ٹیسٹ کرکٹ میں پاکستان کی نمائندگی کی۔ 1968ء میں حنیف محمد کو وزڈن نے ’’کرکٹر آف دی ایئر‘‘ کا اعزاز دیا۔ وہ ان پانچ پاکستانی کھلاڑیوں میں شامل ہیں جن کی تصاویر آئی سی سی کے ہال آف فیم میں دنیا کے 78 بڑے کھلاڑیوں کی تصاویر کے ساتھ آویزاں کی گئی ہیں (پاکستان کے بقیہ چارکھلاڑی عمران خان، جاوید میاں داد، وسیم اکرم اور وقار یونس ہیں)۔ حنیف محمد نے فرسٹ کلاس کرکٹ میں بھی 499 رنز کی ایک اننگز کھیلی تھی جو ایک طویل عرصے تک دنیا کی سب سے بڑی اننگز کے اعزاز کی حامل رہی تھی۔ حکومت پاکستان نے ان کی خدمات کے اعتراف کے طور پر انہیں 23 مارچ 1959 ء کو صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی عطا کیا تھا۔وہ کرکٹ کی دنیا میں لٹل ماسٹر کی عرفیت سے بھی جانے جاتے ہیں۔      

UP