> <

پاک فوج کے سربراہ ۔ جنرل راحیل شریف

جنرل راحیل شریف (انتیس نومبر ۲۰۱۳ء تا حال) پاکستان کی بری فوج کے پندرہویں سربراہ جنرل راحیل شریف 16 جون 1956 کو کوئٹہ میں پیدا ہوئے۔ ان کا تعلق ایک فوجی گھرانے سے ہے ۔ ان کے والد میجر محمد شریف تھے جبکہ ان کے بڑے بھائی میجر شبیر شریف شہید کو 1971ء کی پاک بھارت جنگ میں نشان حیدر کا اعزاز عطا ہوا تھا۔ 1965 ء کی پاک بھارت جنگ میں نشان حیدر حاصل کرنے والے میجر عزیز بھٹی شہید بھی ان کے قریبی عزیز تھے۔  راحیل شریف نے گورنمنٹ کالج لاہور سے باقاعدہ تعلیم حاصل کی اور اس کے پاکستان ملٹری اکیڈمی میں داخل ہوئے ۔ وہ اکیڈمی کے 54ویں لانگ کورس کے فارغ التحصیل ہیں- 1976 ء میں گریجویشن کے بعد، انہوں نے فرنٹیئر فورس رجمنٹ میں کمیشن حاصل کیا- نوجوان افسر کی حیثیت سے انہوں نے انفنٹری بریگیڈ میں گلگت میں فرائض سرانجام دئیے- ایک بریگیڈیئر کے طور پر، انہوں نے دو انفنٹری بریگیڈز کی کمانڈ کی جن میں کشمیر میں چھ فرنٹیئر فورس رجمنٹ اور سیالکوٹ بارڈر پر 26 فرنٹیئر فورس رجمنٹ شامل ہیں۔ جنرل پرویز مشرف کے کے دور میں میجر جنرل راحیل شریف کو گیارہویں انفنٹری بریگیڈ کا کمانڈر مقرر کیا گیا- راحیل شریف ایک انفنٹری ڈویژن کے جنرل کمانڈنگ افسر اور پاکستان ملٹری اکیڈمی کے کمانڈنٹ رہنے کا اعزاز بھی رکھتے ہیں- راحیل شریف نے اکتوبر 2010 سے اکتوبر 2012 تک گوجرانوالہ کور کی قیادت کی- انہیں جنرل ہیڈ کوارٹرز میں انسپکٹر جنرل تربیت اور تشخیص رہنے کا اعزاز بھی حاصل ہے ۔ 27 نومبر 2013 کو انھیں وزیر اعظم پاکستان نواز شریف نے پاکستان کی مسلح افواج کا سربراہ مقرر کیا ۔ ذرائع کے مطابق راحیل شریف سیاست میں عدم دلچسپی رکھتے ہیں- انہیں دو سینئر جرنیلوں، لیفٹیننٹ جنرل ہارون اسلم اور لیفٹیننٹ جنرل راشد محمود پر فوقیت دی  گئی ۔ ایک سینئر جنرل لیفٹیننٹ جنرل ہارون اسلم نے اسی وجہ سے فوج سے استعفی دیا۔ ایک اور سینئر جنرل، لیفٹیننٹ جنرل راشد محمود کو بعد ازاں چیئرمین جوائنٹ چیف آف سٹاف کمیٹی مقرر کر دیا گیا۔۔ جنرل راحیل شریف اس وقت دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستانی قوم کی رہنمائی کر رہے ہیں ۔        

UP