روشن آرا بیگم کی وفات

روشن آرا بیگم ٭5 دسمبر 1982ء کو کلاسیکی موسیقی کی نامور گائیکہ ملکہ موسیقی روشن آرا بیگم وفات پاگئیں۔ روشن آرا بیگم کا اصل نام وحید النسا بیگم تھا، وہ 1915ء میں کلکتہ میں پیدا ہوئیں ان کا تعلق ایک موسیقی دان گھرانے سے تھا چنانچہ موسیقی سے ان کا لگائو فطری تھا۔ ابتدائی مشق ان کی والدہ چندا بیگم نے کروائی پھر استاد لڈن خان سے موسیقی کے اسرار و رموز سیکھے۔ اسی زمانے میں فلموں میں بھی کام کیا۔ پھر کیرانہ گھرانے کے استاد عبدالکریم خان کی شاگردی اختیار کی اور کیرانہ گھرانے کی سب سے ممتاز نمائندہ بن گئیں۔ روشن آرا بیگم کی شادی ایک پولیس افسر چوہدری احمد خان سے ہوئی تھی جو موسیقی کے بڑے شوقین تھے۔ چوہدری احمد خان لالہ موسیٰ کے رہنے والے تھے، چنانچہ قیام پاکستان کے بعد روشن آرا بیگم نے بھی لالہ موسیٰ میں اقامت اختیار کی اور ریڈیو پاکستان لاہور سے گاہے بہ گاہے موسیقی کے پروگرام کرتی رہیں۔ روشن آرا بیگم کو حکومت پاکستان نے صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی اور ستارۂ امتیاز سے نوازا تھا۔وہ لالہ موسیٰ ضلع گجرات میں جی ٹی روڈ پر تعمیر شدہ مقبرہ میں آسودۂ خاک ہیں۔      

UP